گھر میں مہمان آ جائیں یا ہو کھانے کی جلدی، چکن پکوڑا کی یہ آسان سی ریسیپی بنا کر سب کا دل جیت لیں

رمضان المبارک آنے والا ہے اور اس مبارک مہینے میں جہاں لوگ عبادات کثرت سے کرتے ہیں اور اپنے پیارے پروردگار کی طرف سے دی گئی رحمتیں اور برکتیں سمیٹتے ہیں، وہیں اس مہینے میں سحری اور افطاری کے وقت گھر گھر میں خاص الخاص اہتمام کیا جاتا ہے۔ اور گھر کی خواتین نئے سے نئے کھانے اور ڈیشیز بنانے کی کوشش کرتی ہیں تاکہ روزےداروں کو اچھی سی افطاری کھِلا کر ثواب بھی سمیٹیں اور گھر والوں گے دل بھی جیتیں۔آج ہم آپ کے ساتھ ایسی ہی ایک ریسیپی شیئر کریں گے جو اس مہینے میں تقریباً ہر گھر میں بنتی ہے۔ جی ہاں!! آپ صحیح سمجھے، آج ہم بات کر رہے ہیں پکوڑوں کی جو تقریباً ہر گھر کے دسترخوان کی شان بنتے ہیں۔ چاہے بارش کا موسم ہو یا شام کی چائے کا وقت، چاہے مہمان آئے ہوں یا ہو رمضان المبارک کی ایک افطار کی شام، پکوڑوں کا نام نہ آئے تو کچھ کمی سی لگتی ہے۔خاص کر بارش کے موسم میں تو پکوڑے نہ ہوں تو بارش ہی پھیکی سی لگتی ہے۔ اب پکوڑوں کی بھی اقسام ہوتی ہیں۔ سادہ پکوڑے، آلو کے پکوڑے، پالک کے پکوڑے، مکس سبزی کے پکوڑے، پیاز کے پکوڑے اور چکن پکوڑے۔ تو آج ہم آپ کے لیے بہت ہی لذیذ اور کرسپی چکن پکوڑے کی ریسیپی لے کر آئے ہیں۔ تو آئیے شروع کرتے ہیں کرنچی چکن پکوڑے کی کرنچی سی ریسیپی۔

اجزاء

چکن ( بون لیس ) —————- 300 گرام
پیاز ———————- ایک درمیانے سائز کی
ہری مرچ —————- 2 عدد
ہرا دھنیا —————– تھوڑا سا
بیسن ——————- 100 گرام
میدہ ——————– ایک کھانے کا چمچ
پانی ——————– آمیزہ بنانے کے لیے
آئل ——————- فرائی کرنے کے لیے

چکن میرینیٹ کرنے کے لیے

لہسن اور ادرک کا پیسٹ ——- ایک کھانے کا چمچ
لال مرچ پاؤڈر ———— ایک چائے کا چمچ
لال مرچ کُٹی ہوئی ——— ایک چائے کا چمچ
سفید زیرہ —————– ایک چائے کا چمچ
ثابت دھنیا —————- ایک چائے کا چمچ
نمک ——————— 3/4 چائے کا چمچ
اجوائن ——————- چوتھائی چائے کا چمچ
ہلدی ——————– چوتھائی چائے کا چمچ
قصوری میتھی ———- تھوڑی سی

بنانے کا طریقہ

سب سے پہلے ایک برتن میں بون لیس چکن ڈال لیں۔ یہ بات یاد رہے کہ چکن کے چھوٹے ٹکڑے کرنے ہیں۔ اب اس چکن میں ادرک اور لہسن کا پیسٹ، نمک، لال مرچ پاؤڈر، کُٹی لال مرچ، ہلدی، سفید زیرہ، ثابت خُشک دھنیا، قصوری میتھی، اجوائن ڈال کر اچھی طرح مکس کر لیں اور پھر اسے ڈھک کر 10 سے 15 منٹ تک کے لیے میرینیٹ ہونے کے لیے رکھ دیں۔

جب چکن میرینیٹ ہو جائے تو اس میں پیاز، ہری مرچیںاور ہرا دھنیا ڈال کر مکس کر لیں۔ پھر اس کے بعد اس چکن میں بیسن اور میدہ ڈال دیں اور اچھی طرح مکس کر لیں۔ اب اس میں پانی ڈال کر بیٹر بنا لیں۔ یہاں پر یہ بات قابلِ ذکر ہے کہ یہ بیٹ زیادہ پتلا نہیں کرنا ۔

اب ایک پین میں آئل گرم کریں اور ہاتھ یا چمچ کی مدد سے چکن پکوڑے کے آمیزے سے چھوٹے چھوٹے پکوڑے بنا لیں۔ جب پکوڑے آئل میں ڈالیں تو ایک سائیڈ گولڈن ہونے کے بعد پکوڑوں کی سائیڈ بدلیں۔اور پیارا سا گولڈن کلر آنے پر پکوڑے نکال لیں۔ اسی طریقے سے سارے پکوڑے فرائی کر لیں۔

لیں جی!! آپ کے گرما گرم ، بہت ہی لذیذ اور کرسپی پکوڑے تیار ہیں۔ خود بھی کھائیں اور دوسروں کو بھی کھِلا کر تعریفیں سمیٹیں۔

یقین کریں یہ چکن پکوڑے اس قدر کرسپی اور مزیدار بنیں گے کہ کھانے سے ہاتھ ہی نہیں رُکے گا۔ آپ بھی یہ ریسیپی ضرور ٹرائی کیجئے گا۔

چکن پکوڑے کے بارے میں


چکن پکوڑے کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ یہ پشاور کے ایک مشہور ہوٹل کی ایجاد ہے۔ اس ہوٹل پر کوئی بھی فرائیڈ چیز لوگوں کو نہیں ملتی تھی تو اس ہوٹل کے مالک نے سوچا کہ کیوں نہ کوئی ایسی ریسیپی بنائی جائے جو سب سے زیادہ منفرد ہو اور جسے کھانے لوگ دور دور سے آئیں۔ تو پھر ہوٹل کے مالک نے نئی قسم کے پکوڑے بنائے جس میں چکن بھی شامل کیا اور اس ریسیپی کو چکن پکوڑا کا نام دے دیا۔ واقعی اس ریسیپی جس کا نام چکن پکوڑا رکھا گیا ، اسے کھانے دور دور سے لوگ آنے لگے اور چکن پکوڑا کی وجہ سے وہ ہوٹل تو مشہور ہوا ہی، اس کے ساتھ ساتھ یہ ریسیپی پھر مختلف علاقوں میں بننے لگی اور چکن پکوڑے کے شوقین سبھی لوگ ہوتے گئے۔ اور اب آج بھی گھر گھر ببنے والے پکوڑوں میں جب نام چکن پکوڑوں کا آ جائے تو لوگ بہت ہی ذوق و شوق سے کھاتے ہیں۔ یہاں یہ بات بھی واضح کرتے جائیں کہ پشاور میں 1930 میں یہ ریسیپی ایجاد کی گئی تھی اور ابھی تک اس ریسیپی کا جو نام ہے وہ آپ سب کے سامنے ہے ۔ اس ریسیپی کی بنیاد ایک ہی ہے ،بس کچھ لوگ اس میں اپنی مرضی سے کچھ اجزاء زیادہ ڈال دیتے ہیں اور کچھ لوگ کم، لیکن یہ ریسپی جو آج کے اس آرٹیکل میں آپ نے دیکھی ، اس کا جواب نہیں۔ آپ ضرور ٹرائی کریں اور کمنٹ سیکشن میں ضرور بتائیے گا کہ آپ کے چکن پکوڑے کیسے بنے۔

ہمیں امید ہے کہ آپ کو یہ ریسیپی ضرور پسند آئے گی ۔ اگر آپ کے گھر اچانک سے مہمان آ جائیں تو یہ جھٹ پٹ بننے والی مزیدار ڈِش ہے جو آپ جلدی سے بنا کر مہمانوں کو سرو کر سکتے ہیں اور مہمان آپ کے ہاتھ کے ذائقے کے دیوانے ہو جائیں گے اور کھانے سے اُن کا ہاتھ ہی نہیں رُکے گا۔ آپ یہ ریسیپی آزما کر دیکھ لیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *