مونگ پھلی کے چھوٹے سے دانے کے جادوئی اثرات

خوبصورتی سے لے کر صحت تک کے مسائل کا حل مونگ پھلی میں پوشیدہ

مونگ پھلی کے ایسے حیرت انگیز فوائد جنہیں سُن کر آپ حیران رہ جائیں گے۔ مونگ پھلی ایسا ہر دلعزیز میوہ ہےجسے ہر کوئی کھانا پسند کرتا ہے۔ مونگ پھلی ہر چھوٹے بڑے کا پسندیدہ ڈرائی فروٹ ہے۔ یہ ننھا منا سا چھوٹا سا میوہ نہ صرف ذائقے میں بہت ہی زیادہ لذیذ ہے بلکہ غذائیت میں بہت سارے پھلوں اور میوہ جات کا بادشاہ ہے۔ سردیوں کے موسم میں مونگ پھلی نہ ہو ،ایسا تو ہو ہی نہیں سکتا۔جیسے ہی موسم سرما کی آمد آمد ہوتی ہے، تو ساتھ ہی مونگ پھلی کا شور ہر طرف مچ جاتا ہے۔ کچھ گھروں میں تو سردی کی پہلی ہوا چلتے ہی مونگ پھلی کی آمد آمد ہو جاتی ہے مگر کچھ گھروں میں سردی کی پہلی بارش کا انتظار کیا جاتا ہےکہ موسم سرما کی پہلی بارش ہو تو گھر میں مونگ پھلی آئے۔ مونگ پھلی کا ذائقہ تو شاندار ہوتا ہی ہے اور ہر کوئی اسے شوق سے کھاتا ہے بلکہ غذائی اعتبار سے بھی اس کے بے تحاشا فوائد ہیں۔ نہ صرف یہ ننھا منا سا میوہ ذائقے میں بادشاہ ہےبلکہ غذائیت میں تو بادشاہوں کا بادشاہ ہے۔ اس کا استعمال اگر باقاعدگی سے کیا جائے تو دُبلے پتلے افراد کے لیے بہت غذائیت بخش ثابت ہوتا ہے۔نہ صرف دُبلے پتلے لوگوں کے لیے یہ صحت بخش ہے بلکہ جو لوگ باڈی بلڈنگ کا شوق رکھتے ہیں، وہ بھی اگر مونگ پھلی کا استعمال کریں تو حیرت انگیز نتائج دیکھیں گے۔

مونگ پھلی میں قدرتی طور پر ایسے اینٹی آکسیڈنٹس پائے جاتے ہیں جو غذائیت کے لحاظ سے بہت سے طاقتور پھلوں سے زیادہ طاقت کے حامل ہیں، جیسے چقندر، گاجر اور یہاں تک کہ سیب سے بھی زیادہ غذائیت ہے- وزن کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتی ہے اور باڈی بلڈنگ کرنے والے افراد کے لیے بھی مونگ پھلی بہت مفید ہے۔

بیماریوں سے بچاؤ

یہ ننھا منا سا دانہ نہ صرف خوش ذائقہ ہے بلکہ کمزور جسم لوگوں اور باڈی بلڈنگ والے افراد کے ساتھ ساتھ یہ بہت سے امراض سے چھٹکارا پانے میں بھی اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ یہ چھوٹا سا میوہ طبی لحاظ سے بھی بہترین ہے اور کئی امراض سے حفاظت کا کرشمہ اپنے اندر سموئے ہوئے ہے۔مونگ پھلی میں بہت ہی خطرناک بیماری کینسر سے لڑنے کی صلاحیت بھی موجود ہے کیونکہ اس میں پایا جانے والا وٹامن ای اس نامُراد بیماری سے لڑنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔

یہ نہ صرف کینسر کے خلاف جنگ کرنے میں مددگار ہےبلکہ شوگر کے مریضوں کے لیے بھی یہ ننھا سا میوہ جادوئی اثر رکھتا ہے۔ حال ہی میں ایک تحقیق کے ذریعے یہ بات سامنے آئی ہے کہ شوگر کے مریضوں کے لیے مونگ پھلی بہترین ہے۔ کینیڈا کے ماہرین کے مطابق دوسرے درجے کی شوگر کے مریضوں لے لیے مونگ پھلی بہت زیادہ مفید ہے۔ اگر دوسرے درجے کی شوگر کے مریض روزانہ ایک چمچ مونگ پھلی کھا لیں تو شوگر کو بہت حد تک کنٹرول کر سکتے ہیں۔ مونگ پھلی میں موجود اجزاء انسولین کی سطح بڑھانے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ شوگر کے جو مریض انسولین استعمال کرتے ہیں وہ موبگ پھلی کے استعمال سے اپنے خون میں انسولین کی سطح برقرار رکھ سکتے ہیں۔

اس کے علاوہ یہ پتھری کی روک تھام میں بھی مددگار ثابت ہوتا ہے اور دل کی صحت میں بھی معاون ثابت ہوتا ہے۔ ساتھ ہی ساتھ یہ کولیسٹرول کو بھی کم کرنے میں مدد دیتی ہے۔

خون بنانے میں مددگار

یہ چھوٹا سا اور ننھا منا سا میوہ نہ صرف اپنے اندر بیماریوں سے لڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے بلکہ اس میں خون پیدا کرنے کی بھی بھرپور صلاحیت ہے کیونکہ اس میں موجود فولاد خون کے نئے خلیات بنانے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔

خوبصورتی میں اضافہ

مونگ پھلی نہ صرف بیماریوں سے حفاظت میں معاون ثابت ہورا ہے بلکہ خوبصورتی بڑھانے میں بھی اس کا جواب نہیں۔ مونگ پھلی میں موجود وٹامن ای، وٹامن 6، زنک، نائسین اور پروٹین بالوں اور ناخنوں کو مضبوط بناتے ہیں اور نہ صرف بالوں کو صحت مند بتاتے ہیں بلکہ جلد پر دھوپ سے ہونے والے اثرات اور نقصانات کو بچانے میں مدد گار ہے۔ اس کے علاوہ جھریوں کو کم کرتے ہیں اور عمر کے ساتھ ساتھ جو جلد پر دھبے پڑتے ہیں اُن سے نجات میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

غرض کہ مونگ پھلی بہت سے قدرتی ضذائی اجزاء کا بہترین قدرتی ذریعہ ہےجو ہماری جلد، ہمارے بالوں اور مجموعی طور پر ہماری صحت کے لیے بے حد مفید ہے۔
مونگ پھلی سے متعلق اگر بات کی جائے تو اسے نہ صرف ڈرائی فروٹ کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے بلکہ پی نٹ بٹر کے طور پر بھی لوگ اسے یوز کرتے ہیں اور اس کے بھی بے تحاشا فوائد ہیں۔ علاوہ ازیں مونگ سے بہت سی ڈِشیں بھی بنائی جاتی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *