کیل مہاسے بھگانے کا آسان اور سستا ترین بادشاہ ٹوٹکہ

ایکنی تمام عمر کے لوگوں کا عام مسئلہ ہے۔یہ مسئلہ کسی بھی عُمر میں کسی کو بھی در پیش آ سکتا ہے لیکن زیادہ تر کیل مہاسے جوانی کے دور میں ہوتے ہیں۔ کیل مہاسوں کی بہت سی وجوہات ہو سکتی ہیں۔ جن میں سے کچھ وجوہات درج ذیل ہیں۔

اضافی سیبم کی پیداوار

سیبم ایک تیل والا مادہ ہے جس سے جلد آئلی ہو جاتی ہے۔ جو جلد میں سیبیشئیس غدود سے تیار ہوتا ہے۔ جب جسم بہت زیادہ چکنائی پیدا کرتا ہے، تو یہ جلد کے مردہ خلیوں کے ساتھ گھل مل جاتی ہے اور بالوں کے فولیکلز کو بند کر دیتی ہے یعنی بال نکلنے کی جگہ کو بند کر دیتی ہے، جس سے مہاسوں کی تشکیل ہوتی ہے۔
جب بالوں کے فولیکلز اضافی سیبم اور جلد کے مردہ خلیوں کے ملنے سے بھر جاتے ہیں، تو یہ ایک ایسا ماحول پیدا کرتا ہے جہاں بیکٹیریا پروان چڑھ سکتے ہیں، جو سوزش اور مہاسوں کی تشکیل کا باعث بنتے ہیں۔

بیکٹیریا کی وجہ سے ہونے والا انفیکشن

پروپائیونک بیکٹیریم ایک انفیکشن ہے جو کہ بالوں کے فولیکلز میں بیکٹیریا کی وجہ سے ہوتا ہے۔ بالوں کے فولیکلز میں اس انفکشن کی وجہ سے سوزش ہو جاتی ہے جس کی وجہ سے مہاسوں کی نشوونما بڑھ جاتی ہے۔

ہارمونز کی تبدیلیاں

ہارمونل تبدیلیاں، جیسے کہ بلوغت، حمل، ماہواری، اور بعض طبی حالات، سیبم کی پیداوار میں اضافہ اور مہاسوں کی نشوونما میں حصہ ڈال سکتی ہیں۔

غذا اور مہاسوں کا آپس میں تعلق

غذا اور مہاسوں کا بھی آپس میں بہت گہرا تعلق ہے۔اگر آپ کی غذا اچھی ہو گی تو آپ کی جلد اچھی ہو گی اور مہاسوں کا اندیشہ بہت کم ہو گا، لیکن اگر آپ صحت افزا غذا نہیں کھائیں گے تو آپ کی جلد پر مہاسے ہونے کے چانسز بڑھ جائیں گے۔ کچھ غذائیں جن میں اعلیٰ گلیسیمک انڈیکس ہوتا ہو وہ کیل مہاسوں کو بڑھا سکتی ہیں ۔ ان غذاؤں میں میٹھی اور پراسیس غذائیں شامل ہیں۔ یعنی کہ میٹھی اور پراسیس شُدہ غذائیں کھانے سے کیل مہاسے بڑھ سکتے ہیں۔

تناؤ

اعلی سطح کا تناؤ جسم کو کورٹی سول جیسے ہارمونز کے اخراج کے لیے متحرک کر سکتا ہے، جو سیبم کی پیداوار کو بڑھا سکتا ہے اور مہاسوں کے بھڑک اٹھنے کا باعث بن سکتا ہے۔

موروثی اثرات

اگر آپ کے والدین یا بہن بھائیوں کو مہاسے تھے تو آپ کو بھی مہاسوں کے بڑھنے کا زیادہ امکان ہوسکتا ہے۔

کاسمیٹکس اور جلد کی نگہداشت کی مصنوعات

کچھ کاسمیٹکس اور جلد کی دیکھ بھال کرنے والی مصنوعات مساموں کو بند کر سکتی ہیں اور مہاسوں کو بڑھا سکتی ہیں، خاص طور پر اگر ان پر نان پور-کلاگنگ کا لیبل نہ لگایا گیا ہو۔ اس لیے ایسی مصنوعات کو خریدنے سے پہلے یہ دیکھ لیا کریں کہ نان پور کلاگنگ کا لیبل لگا ہوا ہے یا نہیں۔

ماحولیاتی عوامل کے اثرات

آلودگی، نمی اور بعض موسموں کی تبدیلی مہاسوں کی شدت کو متاثر کر سکتی ہے۔

رگڑ اور دباؤ

جلد پر مسلسل رگڑنا یا دباؤ مثال کے طور پرچہرہ دھونے کے بعد تولیے سے رگڑ کر صاف کرنے یا پھر پسینہ آنے کی صورت میں چہرہ رگڑ کر صاف کرنے، تنگ لباس پہننے، ہیلمٹ پہننے وغیرہ سے مہاسوں کی نشوونما میں اضافہ ہو سکتا ہے۔
یہ نوٹ کرنا ضروری ہے کہ مہاسوں کی صحیح وجوہات ایک شخص سے دوسرے میں مختلف ہو سکتی ہیں۔ اور اکثر یہ مسئلہ کسی ایک وجہ سے نہیں بلکہ بہت سی وجوہات کی بنا پر ہوتا ہے۔ کچھ لوگوں میں مہاسوں کا یہ مسئلہ کم ہوتا ہے اور کچھ میں شدید۔اس ضمن میں بہت سی کھانے کی ادویات بھی ملتی ہیں اور جلد پر لگانے والی ادویات بھی۔

کیل مہاسوں سے نجات کا آسان، مفید، نہایت کارآمد اور آزمودہ ٹوٹکہ

بہت سے لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ کیل مہاسوں کا علاج ادویات سے کیا جاتا ہے مگر یہ سراسر غلط ہے کیونکہ ادویات کو استعمال کرنے سے شاید وقتی طور پر تو کیل مہاسے کم یا ختم ہو جائیں لیکن یہ ادویات نقصان کا باعث بنتی ہیں اور کیل مہاسے پھر سے ہونے کا خدشہ ہوتا ہے۔اس لیے ادویات کو ترجیح دینے کی بجائے گھریلو ٹوٹکوں کا استعمال کرنا چاہیے۔کیونکہ ادویات سے بہت زیادہ بہتر گھریلو علاج ہے۔ اگر کیل مہاسوں سے چھٹکارا حاصل کرنا چاہتے ہیں تو اس کے لیے سب سے پہلے احتیاط بہت ضروری ہے اور اس کے بعد گھریلو ٹوٹکے۔ جن کو اپنا کر اس مسئلے کو حل کیا جا سکتا ہے۔
آج کے اس بلاگ میں ہم آپ کے لیے اس مسئلے سے چھٹکارا پانے کے لیے ایک ایسا بہت ہی آسان، مفید ، کارآمد اور آزمودہ گھریلو توٹکہ شیئر کرنے جا رہے ہیں جس کو اپنا کر آپ یقینی طور پر کیل مہاسوں سے چھٹکارا پا سکتے ہیں۔تو آئیے شروع کرتے ہیں۔

کیل مہاسے بھگانے کا یہ بادشاہ ٹوٹکہ ضرور آزمائیے گا۔

احتیاط

یہ ٹوٹکہ آپ کے کیل مہاسوں کو یقینی طور پر ایک سے دو ہفتوں میں ختم کر دے گا اور آپ کو یوں محسوس ہو گا گویا یہ کبھی تھے ہی نہیں۔ اس کے لیے احتیاط یہ ہے کہ آپ پہلے کسی ایسے صابن اور کریم کا چناؤ کر لیں جو آپ کی جلد کے لیے الرجک نہ ہو۔

ٹوٹکہ

نہایت ہی آسان اور سادہ سا ٹوٹکہ یہ ہے کہ ایک لیموں لے کر اس کو دو حصوں میں کاٹ لیں اور اس کے بیج نکال دیں۔ رات کو سونے سے پہلے منہ دھو کر صاف کپڑے سے خشک کر لیں اور پھر آدھا لیموں لے کر چہرے پر ہلکا ہلکا مساج کریں ۔ مساج کرتے ہوئے اس بات کا خاص خیال رکھیں کہ لیموں کو ہلکے ہاتھوں سے چہرے پر ملنا ہے،زور سے نہیں رگڑنا۔ یہ عمل پانچ سے دس منٹ تک کریں اور چہرہ دھوئے بغیر سو جائیں۔ صبح اُٹھ کر صابن سے چہرہ دھو لیں۔

لیموں کے استعمال سے ہلکی پھلکی چبھن ہو سکتی ہے اور بعض اوقات مہاسوں سے تھوڑا خون بھی نکل سکتا ہے لیکن یہ گدلا خون ہو گا جس کے نکلنے سے کوئی پریشانی والی بات نہیں ہے۔ آپ نے یہ عمل ایک سے دو ہفتے مسلسل کرنا ہے۔ عمل کے شروع کرنے سے پہلے اپنی ایک سیلفی لے کر ضرور رکھ لیجیے گا اور دو ہفتے کے بعد پہلے والی سیلفی سے اپنا موازنہ ضرور کریں۔یقیناً آپ کا چہرہ صاف ہو چکا ہو گا ۔ اور یہ ٹوٹکہ استعمال کرنے کے بعد ایمانداری کے ساتھ ہمارے اس پیج پر واپس آ کر کمنٹ کر کے ہماری حوصلہ افزائی ضرور کیجیے گا تاکہ آپ کے اس کمنٹ کو دیکھتے ہوئے باقی لوگ بھی اس ٹوٹکے سے استفادہ حاصل کر سکیں۔

اول تو اس ٹوٹکے کے بعد آپ کو کسی دوسرے ٹوٹکے کی ضرورت نہیں ہو گی لیکن پھر بھی اگر آپ کو لگے کہ کوئی اور ٹوٹکہ بھی استعمال کرنا چاہیے تو ہمیں کمنٹ میں لکھیے گا ۔ ہم آپ کے لیے دوسرے ٹوٹکے بھی ضرور شیئر کریں گے۔ لیکن یاد رکھیے کہ یہ والا ٹوٹکہ سارے ٹوٹکوں کا بادشاہ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *